تعینات

اللہ تعالی کی ذات نے جن مراتب اور جن منزلوں سے نزول فرمایا انہیں صوفیاء کی زبان میں تعینات(تعین کی جمع) تجلیات (تجلی کی جمع)اوراعتبارات (اعتبار کی جمع) کے الفاظ سے یاد کیا جاتا ہے۔

تعین کے معنی ہیں حق تعالی کا اپنی ذات کو پانا ۔

تعنیات کی دو اقسام ہیں ۔ داخلی اور خارجی

تعینات داخلی کی پھر دو قسمیں ہیں۔ اجمالی اور تفصیلی ۔

تعینات داخلی اجمالی

تعتن اول . وحدت جہاں حق تعالی نے اپنے وجود کو پایا اور انارمایا ۔

تعینات داخلی تفصیلی

۔ واحدیت جہاں ذات نے ذات میں صفات ذات کو پایا

تعینات خارجی

بقیہ تعینات جو کہ ظہور میں اسماء وصفات و افعال کے مثلا ارواح و امثال و اجسام وغیرہ ۔

تعین اول

حق تعالیٰ نے غیب ہویت یعنی لاتعین سے جس چیز پر سب سے پہلے تجلی فرمائی اس کو تعین اول کہتے ہیں اس کو تجلی اول، وحدت الحقیقت ،حجاب العظمت وغیرہ کے الفاظ سے بھی یاد کیا جاتا ہے

تعین ثانی

تعین اول کے بعد جس چیز پر تجلّی فرمائی اس کے لیے صوفیاء تعین ثانی تجلی ثانی، حضرت الوہیت، حقیقت انسانی، حضر اسماء الصفات وغیرہ کے الفاظ استعمال کرتے ہیں۔


ٹیگز

اپنا تبصرہ بھیجیں